سعودی حکومت کو اپنی جنگ پسندانہ پالیسیوں کی وجہ سے مسلسل بجٹ خسارے کا سامنا ہے۔

سعودی عرب کی کابینہ نے جمعرات کو ایک بیان میں اعلان کیا ہے کہ دو ہزار سترہ میں حکومتی اخراجات میں چھے فیصد اضافہ ہو گا اور حکومتی اخراجات دو سو سینتیس ارب ڈالر تک پہنچ جائیں گے یوں سعودی عرب کو ترپن ارب ڈالر خسارے کا سامنا کرنا ہو گا- سعودی کابینہ کے بیان میں کہا گیا ہے کہ آئندہ سال سعودی عرب کی آمدنی ایک سو چوراسی ارب ڈالر ہو گی- تیل کی قیمتوں میں کمی اور یمن پر مسلط کردہ جنگ میں سعودی حکومت کے بھاری جنگی اخراجات، سعودی عرب کے بجٹ خسارے کی اہم وجہ، شمار ہوتے ہیں- سعودی عرب کو دو ہزار پندرہ اور دو ہزار سولہ میں بھی بالترتیب ستاسی ارب اور اٹھانوے ارب ڈالر کے خسارے کا سامنا تھا- سعودی حکومت نے گذشتہ دو برسوں میں اپنا بجٹ خسارہ زرمبادلہ کے ذخائر سے پورا کیا تھا- سعودی حکومت، بجٹ خسارے کو کم کرنے کے لئے تیل و گیس پر سبسڈی کو کم اور ٹیکسوں میں اضافہ کرنا چاہتی ہے-  

 

Dec ۲۲, ۲۰۱۶ ۱۶:۰۷ UTC
کمنٹس