افغانستان کے صدر نے کہا ہے کہ کابل اور قندھار میں ہونے والے دہشت گردانہ بم دھماکوں کے جواب میں طالبان کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔

افغانستان کے صدر محمد اشرف غنی نے دارالحکومت کابل اور قندھار میں ہونے والے دہشت گردانہ بم دھماکوں کے بعد طالبان گروہ پر کڑی تنقید کی اور اعلان کیا ہے کہ اس گروہ کے اس قسم کے اقدامات کا سختی سے جواب دیا جائے گا۔

کابل میں ہونے والے بم دھماکوں میں سینتیس افراد جاں بحق اور ستّر دیگر زخمی ہو ئے جبکہ قندھار میں ہونے والے بم دھماکوں میں اٹھارہ افراد مارے گئے ہیں جن میں متحدہ عرب امارات کے پانچ سفارت کار بھی شامل ہیں۔

 افغانستان کے صدر محمد اشرف غنی نے کہا کہ افغان عوام کے قاتل، ملک میں محفوظ نہیں رہ سکتے اور طالبان کے ان اقدمات نے افغان عوام سے ان کی دشمنی کو آشکارا کر دیا ہے۔

واضح رہے کہ طالبان گروہ نے افغانستان میں ہونے والے ان بم دھاکوں کی ذمہ داری قبول کی ہے جبکہ افغان حکام نے اعلان کیا ہے کہ ان بم دھماکوں میں عام شہری مارے گئے ہیں۔

Jan ۱۱, ۲۰۱۷ ۱۰:۲۲ UTC
کمنٹس