عراق کے شمالی صوبے نینوا کی گورننگ کونسل کے رکن نے کہا ہے کہ عراقی افواج نے موصل کے مشرقی علاقوں میں اپنے ٹھکانوں کو مستحکم بناتے ہوئے داعش کے خلاف اپنی پیش قدمی کا سلسلہ جاری رکھا ہے-

صوبہ نینوا کی گورننگ کونسل  کے رکن الدار الزیباری نے جمعرات کو فارس نیوز ایجنسی سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ موصل کے مشرق اور جنوب مشرقی علاقوں کی جانب عراقی افواج کی تیز رفتار پیش قدمی کا مطلب یہ نہیں ہے کہ عام شہریوں کی سیکورٹی اور ان کی جان کی سلامتی کو نظر انداز کیا جا رہا ہے- 

انہوں نے کہا کہ عام شہریوں کی جان کی حفاظت ہماری پہلی ترجیح ہے -

صوبہ نینوا کے مذکورہ عہدیدار نے کہا کہ موصل کی آزادی کی کارروائیوں میں تیزی کا واحد مقصد شہر کے مختلف علاقوں سے عام شہریوں کو بحفاظت باہر نکالنا ہے-

اس درمیان عراق کی انسداد دہشت گردی فورس کے ایک سینیئر کمانڈر سامی العارضی نے کہا ہے کہ عراقی افواج  موصل شہر کی آزادی کی کارروائیوں کو جاری رکھتے ہوئے اب موصل یونیورسٹی کی عمارت کو کسی بھی وقت داعش کے قبضے سے آزاد کرا سکتی ہیں-

العالم ٹیلی ویژن چینل نے بھی خبر دی ہے کہ عراقی افواج نے موصل کی آزادی کی کارروائیوں کا چھٹا مرحلہ شروع کرنے کے لئے مغربی محاذ پر بھاری ہتھیار پہنچا دیئے ہیں-

 

Jan ۱۲, ۲۰۱۷ ۱۰:۱۷ UTC
کمنٹس