ہندوستان کے سابق وزیراعظم اور کانگریس کے مرکزی رہنما منموھن سنگھ نے کل نئی دھلی کے تال کٹورا اسٹیڈیم میں کانگریس کے جن ویدنا کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ نوٹ بندی نے ملک کی ریڑھ کی ہڈی توڑ دی۔

ہمارے نمائندے کی رپورٹ کے مطابق منموھن سنگھ نے حکومت کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کہا کہ ابھی تو اور برے دن آنے باقی ہیں ہر کانگریسی مرد و عورت کا یہ اخلاقی فرض بنتا ہے کہ وہ حسب تقاضہ حرکت میں آئیں۔ انہوں نے کہا کہ پچھلے دو مہینوں میں حالات بد سے بدتر ہوئے اور نوٹ بندی سے بے روزگاری بڑھے گی اور زراعت، صنعت اور سروس سیکٹروں میں بڑے پیمانے پر زوال آئے گا۔

کانگریس کے نائب صدر راہل گاندھی نے نوٹ بندی کے فیصلے پر اس ملک کے وزیراعظم نریندر مودی پر کڑی نکتہ چینی کرتے ہوئے کہا کہ نوٹ بندی مودی کیلئے ناکامیوں سے بچنے کا ایک بہانہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ جب مودی کی تمام اسکیمیں فیل ہو گئیں تو مودی جی عوام سے بچنے کیلئے نوٹ بندی کے پیچھے چھپ گئے۔ راہل گاندھی نے کہا کہ آج ملک میں بے روزگاری بڑھ گئی ہے، لوگ شہروں سے گاوں کی طرف جارہے ہیں۔ اس کانفرنس سےراہل گاندھی اور منموھن سنگھ کے علاوہ کانگریس کے دوسرے رہنماوں نے بھی خطاب کیا۔

 

Jan ۱۲, ۲۰۱۷ ۰۶:۴۰ UTC
کمنٹس