ہندوستان کے زیر انتظام کشمیر میں فوج کی مبینہ زیادتیوں کے خلاف کشمیری عوام کے مظاہروں کا سلسلہ جاری ہے

کشمیری عوام نے کشمیر میں فوج کی مخالفت کرتے ہوئے منگل کو احتجاجی مظاہرے کئے - مظاہرین ہندوستانی حکومت کے خلاف بھی نعرے لگا رہے تھے - رپورٹ کے مطابق منگل کو کشمیر میں اسکول اور یونیورسٹیاں بند رہیں - منگل کو جنوبی کشمیر کے پلواما میں واقع ایک کالج میں سیکورٹی اہلکاروں اور طلبہ کے بیچ جھڑپیں ہوئیں - پولیس کا کہنا ہے کہ مظاہرہ کرنے والے طلبہ نے ایک ریلی بھی نکالنے کی کوشش کی جسے روک دیاگیا - اس کے بعد طلبہ سے جھڑپ شروع ہوگئی اس دوران پولیس نے آنسو گیس کے گولے داغے- اس احتجاجی مظاہرے میں طالبات بھی موجود تھیں - مظاہرین میں اکثر ڈگری کالجوں کے طلبہ تھے - جھڑپوں کے دوران سیکورٹی اہلکاروں سمیت کئی لوگ زخمی ہوگئے- دوسری جانب اپوزیشن جماعت نیشنل کانفرنس کے کارگذار صدر عمر عبداللہ نے ریاست کی وزیراعلی محبوبہ مفتی کی زیرقیادت جمو و کشمیر حکومت کے ذریعے طلبہ کے مظاہروں سے نمٹنے کے طریقے پر سوال کھڑے کئے ہیں -

Apr ۱۸, ۲۰۱۷ ۱۴:۱۴ UTC
کمنٹس