50 لاکھ ڈالر مالیت کے پہلے کارگو کے بعد ہندوستان اور افغانستان کے حکام پرامید ہیں کہ یہ سروس پاکستان کے ساتھ سرحدی کشیدگی کے باعث تجارت کی راہ میں حائل رکاوٹ پر قابو پانے اور افغانستان اور ہندوستان کی کمپنیوں کو مزید سہولیات فراہم کرے گی۔

افتتاحی پرواز کے موقع پر تقریب سے خطاب کرتے ہوئے افغان صدر اشرف غنی کا کہنا تھا کہ ہمارا مقصد افغانستان کو برآمد کنندہ ملک میں تبدیل کرنا ہے۔

اشرف غنی کے مطابق جب تک ہم برآمد کرنے والا ملک نہیں بن جاتے، غربت اورعدم استحکام کا خاتمہ نہیں ہوسکتا۔

دوسری جانب ہندوستان کے حکام کا کہنا ہے کہ ہوائی کارگو سروس غیرملکی مارکیٹ سے افغانستان کے محدود رابطے کو بہتر بنانے میں مدد دے گی اورجنگ کی لپیٹ میں آنے والے ملک کی زرعی اور قالین کی صنعتوں کی پیداوار میں بھی اضافہ کرے گی۔

اس موقع پر افغانستان میں تعینات ہندوستان کے سفیر من پریت ووہرا نے کہا مارکیٹ کے مطالبے کے مطابق جیسے جیسے یہ کوریڈور کارگو پروازوں کے نیٹ ورک کی صورت اختیار کرے گا ہم مختلف انداز میں افغانستان کی حمایت جاری رکھیں گے۔

واضح رہے کہ ہوائی کارگو سروس کے ذریعے 40 ٹن خشک میوہ جات لے کر افغانستان کی دوسری پرواز اگلے ہفتے جنوبی شہر قندہار سے ہندوستان جائے گی۔

 

Jun ۲۰, ۲۰۱۷ ۰۸:۲۷ UTC
کمنٹس