• کشمیر میں گورنر راج نافذ

بی جے پی اور پی ڈی پی اتحاد ٹوٹنے کے ساتھ اور نئی حکومت کے قیام کے امکانات معدوم ہونے کے پیش نظر کشمیر میں گورنر راج کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

ہندوستان کے زیر انتظام کشمیر میں محبوبہ مفتی کی حکومت کے گرنے کے بعد ہندوستان کےصدر رام ناتھ کووند نے وہاں گورنر راج نافذ کرنے کی منظوری دے دی ہے۔

 کشمیر میں بی جے پی ۔پی ڈی پی اتحاد ٹوٹنے کے بعد وزیر اعلی محبوبہ مفتی نے وزیر اعلی کے عہدے سے استعفی دے دیا ۔اس کے بعد کوئی بھی پارٹی حکومت بنانے کے لئے اتحاد کرنےکو تیار نہیں ہے۔ایسے میں صوبے میں گورنر حکومت لگنا طے ہو گیا ہے۔ کشمیر میں ہندوستان کی دیگر ریاستوں کی طرح صدر کا راج نافذ ہوتا ہے لیکن کشمیر میں گورنر راج  لگایا جاتا ہے۔

حکومت گرنے کے بعد وزیراعلیٰ محبوبہ مفتی نے گورنر کو اپنا استعفیٰ دینے کے بعد سری نگر میں میڈیا سے بات چیت میں کہا کہ ان کی پارٹی نے ریاست کی ترقی کے لئے مرکز میں برسراقتدار پارٹی کے ساتھ اتحاد کیا تھا۔

انہوں نے کہا کہ انہیں بی جے پی کے اس قدم سے کوئی حیرانی نہیں ہوئی ہے۔ بی جے پی کے اتحاد سے الگ ہونے پر مجھے کوئی جھٹکا نہیں لگا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر میں دوہری پالیسی نہیں چلے گی۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ یہ اتحاد اقتدار کی سیاست کے لئے نہیں تھا۔ پی ڈی پی اب بھی صلح اور بات چیت پر یقین رکھتی ہے۔

 

Jun ۲۰, ۲۰۱۸ ۰۸:۳۳ Asia/Tehran
کمنٹس