• ایران میں زلزلہ، 207 افراد جاں بحق

اسلامی جمہوریہ ایران میں آنے والے زلزلے کے بعد، جس میں اب تک 207 افراد جاں بحق ہوئے ہیں، امدادی کارروائیاں بڑے پیمانے پر جاری ہیں۔

ہمارے نمائندے کی رپورٹ کے مطابق ایران کے صوبے کرمانشاہ کے گورنر ہوشنگ بازوند نے نیوز چینل سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ امدادی کارروائیاں بڑے پیمانے پر جاری ہیں جن میں فوج ،سپاہ پاسداران انقلاب اسلامی اور رضا کار فورس کے نوجوان حصہ لے رہے ہیں۔ 

موصولہ رپورٹوں کے مطابق اب تک 207 افراد کی لاشوں کو ملبے سے نکال لیا گیا ہے اور زلزلے کی شدت کے پیش نظر جاں بحق ہونے والوں کی تعداد میں اضافے کا خدشہ ہے۔ زلزلے میں 1700 افراد زخمی ہوئے۔

کرمانشاہ کے گورنر کا کہنا تھا کہ زخمیوں کو اطراف کے شہروں میں منتقل کیا گیا ہے۔ کرمانشاہ میں بجلی کی سپلائی معطل ہے۔ زلزلے کی وجہ سے لوگوں نے رات گھروں سے باہر گزاری۔ کرمانشاہ کے گورنر نے صوبے میں 3 روزہ عام سوگ کا اعلان کیا ہے۔

در ایں اثنا ایران کے وزیر داخلہ رحمانی فضلی نے کہا ہے کہ صدر مملکت کے حکم کے مطابق فوری طور پر زلزلہ زدہ علاقوں میں بڑے پیمانے پر امدادی سرگرمیاں شروع کر دی گئی ہیں۔ اور درجنوں ہیلی کاپٹر امدادی کاموں میں حصہ لے رہے ہیں۔ واضح رہے کہ کل رات ایران کے ایران کے مغربی علاقوں خاص طور سے کرمانشاہ اور کردستان میں رکٹر اسکیل پر 7.3 شدت کے زلزلے نے تباہی مچا دی۔ زلزلے کے جھٹکے عراق میں بھی محسوس کئے گئے۔

Nov ۱۳, ۲۰۱۷ ۰۴:۴۴ UTC
کمنٹس