• غزنی پرطالبان کا قبضہ سینکڑوں ہلاک و زخمی

افغانستان کے شہر غزنی پر طالبان نے دھاوا بول دیا، دہشتگردوں نے اہم سرکاری عمارتوں پر قبضہ کر لیا ہے جبکہ افغان فورسز نے طالبان کو شہر سے نکال باہر کرنے کے لیے جوابی کارروائی شروع کر دی۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق افغانستان کے پارلیمانی انتخابات قریب آتے ہی طالبان کی کارروائیوں میں بھی بے پناہ تیزی آئی ہے۔ کابل کے جنوب میں واقع اہم شہرغزنی پر طالبان نے دھاوا بول دیا۔ طالبان دہشتگردوں نے اہم سرکاری عمارتوں پر قبضہ جما لیا ہے۔ افغان فورسز نے قبضہ چھڑانے کے لیےجوابی کارروائی شروع کی ہے ۔

طالبان نے جمعرات کو رات گئے افغان شہر غزنی پر کئی اطراف سے بڑا حملہ کیا جس میں 14 افغان فوجیوں سمیت 16 افراد جاں بحق ہوگئے جن میں 2 شہری شامل ہیں جب کہ 24 اہلکار زخمی بھی ہوئے۔

افغان فوج کی جوابی کارروائی میں 150 طالبان ہلاک و زخمی ہوئے۔ صوبائی پولیس چیف نے بتایا کہ جوابی کارروائی میں 39 حملہ آور مارے گئے۔ حملہ کرنے والے دہشتگردوں کی تعداد ایک ہزار تھی۔

ادھر طالبان نے بھی غزنی میں کیے گئے حملے کے بارے میں تفصیلات فراہم کی ہیں اور طالبان کی جانب سے جاری بیان میں اس حملے میں متعدد افغان فوجیوں کو ہلاک کرنے کا دعویٰ کیا گیا ہے۔ طالبان کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد کا کہنا ہے کہ طالبان نے شہر کے اہم مقامات اور چیک پوسٹ پر قبضہ کر لیا ہے۔

کابل کے قریب واقع ہونے کے باعث غزنی شہر کو انتہائی اہمیت حاصل ہے۔ افغان حکام کا کہنا ہے کہ طالبان کا حملہ اچانک تھا، شہر کا قبضہ جلد ہی چھڑوا لیا جائے گا۔

حالیہ کچھ عرصے میں افغانستان میں طالبان کے حملوں میں تیزی آئی ہے۔ افغان حکام نے تصدیق کی ہے کہ کچھ عرصے سے طالبان اپنی حکمتِ عملی کو تبدیل کرتے ہوئے شہری علاقوں میں پر قبضہ کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔

 

ٹیگس

Aug ۱۱, ۲۰۱۸ ۰۹:۰۸ Asia/Tehran
کمنٹس