• یمن پر سعودی جارحیت کی شدید مذمت

پاکستان میں سنی اتحاد کونسل کے چیئرمین صاحب زادہ حامد رضا نے یمن پر سعودی عرب کی جاری جارحیت کی شدید مذمت کی ہے۔

پاکستان میں سنی اتحاد کونسل کے چیئرمین صاحب زادہ حامد رضا نے کہا کہ وزیر خارجہ کو اقوام متحدہ میں اپنے خطاب میں یمن کا مسئلہ بھی اٹھانا چاہیئے تھا، یمن میں سعودی مظالم کی انتہا ہوچکی ہے۔

انھوں نے یمن پر سعودی اتحاد کی جارحیت پر اقوام متحدہ اور اسلامی تعاون تنظیم کی خاموشی پر شدید تنقید کی اور کہا کہ پاکستان کے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کو اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی سے اپنے خطاب میں بحران یمن پر بھی بات کرنا چاہئے تھی۔

پاکستان کے اس عالم دین نے اسی طرح اسلامی ملکوں کے سلسلے میں سعودی عرب اور غاصب صیہونی حکومت کی جارحانہ پالیسیوں کے مقابلے میں مسلمانان عالم میں اتحاد اور باہمی تعاون کی ضرورت پرزور دیا۔

دوسری جانب یمن پر سعودی جارحیت کا سلسلہ بدستور جاری ہے اور انسانی حقوق کے اداروں نے سعودی جارحیت کو انسانی حقوق کی کھلم کھلا خلاف ورزی قرار دیا ہے۔

المسیرہ کی رپورٹ کے مطابق یمن کے نہتے عربوں کے خلاف سعودی عرب کے ظلم و ستم اور بربریت کا سلسلہ جاری ہے الحدیدہ پر سعودی عرب کے تازہ ترین حملے میں 3 افراد شہید اور متعدد زخمی ہوگئے ہیں۔

 ادھر یمنی فوج اور قبائل نے بھی سعودی عرب کی بربریت کے جواب میں مغربی ساحل کے محاذ پر سعودی عرب کے فوجی اجتماع پر زلزال 1 نامی میزائل سے حملہ کیا ہے۔

یمنی فوج اور عوامی رضاکار فورس نے جنوبی سعودی عرب میں نجران کے علاقے صحرائے البقع میں سعودی فوجی ٹھکانوں پر گولہ باری بھی کی۔

سعودی عرب نے امریکا اور اسرائیل کی حمایت  سے اور اتحادی ملکوں کے ساتھ مل کر چھبیس مارچ دو ہزار پندرہ سے یمن پر وحشیانہ جارحیتوں کا سلسلہ شروع کر رکھا ہے ۔ اس دوران سعودی حملوں میں دسیوں ہزار یمنی شہری شہید اور زخمی ہوئے ہیں جبکہ دسیوں لاکھ یمنی باشندے اپنے گھر بار چھوڑنے پر مجبور ہوئے ہیں ۔

یمن کا محاصرہ جاری رہنے کی وجہ سے یمنی عوام کو شدید غذائی قلت اور طبی سہولتوں اور دواؤں کے فقدان کا سامنا ہے ۔

 سعودی عرب نے غریب اسلامی ملک یمن کی بیشتر بنیادی تنصیبات اسپتال اور حتی مسجدوں کو بھی منہدم کردیا ہے-

 

ٹیگس

Oct ۰۸, ۲۰۱۸ ۱۷:۳۲ Asia/Tehran
کمنٹس