محمود جبرین نامی ایک فلسطینی مجاہد جو ۲۵ سال کی عمر میں اب سے ۳۰ سال قبل صیہونی دہشتگردوں کے ہاتھوں اسیر بنایا گیا تھا،اب آزاد ہونے کے بعد سب سے پہلے اپنی ماں کی قبر پر گیا اور اسکی فرقت میں بین کئے۔محمود کی رہائی سے تین ماہ قبل اسکی ماں کا انتقال ہو گیا تھا۔اس دوران محمود جبرین نے شادی نہیں کی اور اسکے بہت سے اعزا و اقارب بھی دنیا سے سدھار گئے!

ٹیگس

Oct ۰۹, ۲۰۱۸ ۱۴:۱۱ Asia/Tehran
کمنٹس