Oct ۲۹, ۲۰۱۸ ۱۹:۵۵ Asia/Tehran
  • اربعین حسینی ملین مارچ اپنے نقطہ عروج پر

سیدالشہدا حضرت امام حسین علیہ السلام اور آپ کے اصحاب باوفا کے چہلم میں شرکت کے لئے عراق، ایران، پاکستان، ہندوستان اور دنیا کے مختلف ملکوں سے عراق پہنچنے والے زائرین کا اربعین ملین مارچ اپنے نقطہ عروج پر پہنچ گیا ہے اور تقریبا دو کروڑ زائرین کربلائے معلی پہنچ چکے ہیں یا پہنچنے والے ہیں۔

دنیا کے دور و نزدیک کے ملکوں سے بڑی تعداد میں عاشقان امام حسین علیہ السلام خاص طور پر پچھلے چند برسوں سے اربعین ملین مارچ میں شرکت کے لئے کربلائے معلی پہنچتے ہیں-

غیر ملکی زائرین میں سب سے زیادہ اور بڑی تعداد ایرانی زائرین کی ہوتی ہے اس کے بعد پاکستان، ہندوستان اور آس پاس کے عرب ملکوں کے لاکھوں زائرین عراق پہنچتے ہیں جو اس عظیم الشان اور انتہائی پرامن مارچ میں شریک ہوتے ہیں-

اربعین مارچ کی روایت صدیوں پرانی ہے اور عاشقان اہلبیت اطہار علیہم السلام صدیوں سے اربعین کے موقع پر نجف اشرف سے کربلائے معلی تک پیدل چلتے تھے لیکن پچھلے چند برسوں سے اس مارچ نے آفاقی شکل اختیار کر لی ہے اور دنیا کا شاید ہی کوئی ملک ایسا ہو گا جہاں سے زائرین اور عاشقان اہلبیت اطہار اربعین مارچ میں شرکت کے لئے عراق نہ پہنچتے ہوں-

نجف سے کربلا کے راستے میں موجود ہمارے نمائندوں نے خبر دی ہے کہ مختلف ملکوں کے الگ الگ زبان اور رنگ و نسل کے زائرین نجف سے کربلا کے درمیان کا راستہ جو مشی کے نام شہرت پا چکا ہے پاپیادہ طے کر رہے ہیں-

اس دوران دسیوں لاکھ زائرین کی پذیرائی کے لئے عراقی میزبانوں کا جذبہ خدمت ناقابل توصیف ہے- جگہ جگہ موکب لگے ہوئے ہیں اور عراقی شہری زائرین کی خدمت میں اس طرح مصروف ہیں کہ جیسے یہی ان کی زندگی کا سب سے بڑا مقصد اور ہدف ہے-

عراقیوں کے ساتھ ایران، پاکستان ، ہندوستان، کویت، بحرین، لبنان اور حتی سعودی عرب کے بھی شیعہ مسلمانوں کے موکب زائرین کی خدمت کے لئے لگائے گئے ہیں-

اربعین حسینی کے ملین مارچ میں شرکت کے لئے عراق کے مختلف زمینی اور ہوائی راستوں سے غیر ملکی زائرین نجف اور کربلا پہنچے ہیں-

ایران کے ہمسایہ ملکوں پاکستان، افغانستان، جمہوریہ آذربائیجان، ترکی اور دیگر ملکوں کے دسیوں ہزار زائرین ایران کے راستے عراق روانہ ہوئے ہیں جن کے لئے ایران میں جگہ جگہ قائم کئے گئے ہیں اور ان کے قیام و طعام کا شاندار انتظام کیا گیا ہے-

اس سال اربعین ملین کا مارچ کا خاص سلوگن حب الحسین یجمعنا ہے اور یہ عظیم انسانی اجتماع پوری دنیا کو امن و سلامتی کا پیغام دے کر امام عالیمقام کے حقیقی پیغام یعنی پیغام حریت و آزادی اور امن و سلامتی کو دنیا والوں تک پہنچا رہا ہے-

نجف اور کربلا سے موصولہ خبروں میں کہا گیا ہے کہ اربعین ملین مارچ میں خاصی تعداد غیر مسلموں کی بھی ہے جبکہ اہل سنت بھائی بھی بڑی تعداد میں ملین مارچ میں حصہ لے کر شہدائے کربلا کو اپنے مخصوص انداز میں نذرانہ عقیدت پیش کر رہے ہیں-

اربعین ملین مارچ کا سلسلہ منگل یعنی بیس صفر سید الشہدا امام حسین علیہ السلام کے چہلم کے دن سہ پہر تک جاری رہے گا-

  اس درمیان عراق کے وزیراعظم عادل عبدالمہدی نے زائرین کی سیکورٹی کو یقینی بنانے میں عراق کی سیکورٹی فورسز خاص طور پر عوامی رضا کار فورس الحشدالشعبی کا شکریہ ادا کیا ہے-

عراقی وزیراعظم نے کربلائے معلی پہنچ کر فوج، سیکورٹی فورسز اور عوامی رضا کار فورس کے کمانڈروں سے ملاقات کی اور زائرین کی سیکورٹی کو یقینی بنانے کے لئے کئے گئے انتظامات کا جائزہ لیا۔

ٹیگس

کمنٹس