• جشن عید میلادالنبی(ص) میں لاکھوں یمنیوں کی شرکت

لاکھوں کی تعداد میں یمنی شہری جشن عید میلادالنبی صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم میں شرکت کر کے اس پرمسرت موقع پر اپنی خوشی کا اظہار کر رہے ہیں۔

یمن کی عوامی تحریک انصاراللہ کے سربراہ بدرالدین الحوثی نے اپنے ملک کے عوام کو جشن عید میلادالنبی صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم میں وسیع پیمانے پر شرکت کرنے دعوت دی ہے۔

یمن کے نائب وزیر خارجہ حسین العزی نے بھی سوشل میڈیا پر صنعا اور مختلف دیگر بڑے بڑے شہروں میں منعقدہ جشن عید میلادالنبی(ص) میں لاکھوں یمنیوں کی وسیع پیمانے پر شرکت پر خوشی کا اظہار کرتے ہوئے ٹوئٹ کیا ہے کہ یمن کی عوامی تحریک انصاراللہ کے سربراہ بدرالدین الحوثی کی دعوت پر لبیک کہنے کے لئے یمن کے آٹھ بڑے اسکوائرز پر اتنے وسیع پمیانے پر یمنی شہریوں کی موجودگی توقع سے بھی زیادہ تھی۔

یمن کی عوامی تحریک انصاراللہ کے سربراہ بدرالدین الحوثی نے جشن عید میلادالنبی صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کی مناسبت سے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ بعض عرب حکمرانوں کی طرف سے اسرائیل کے ساتھ تعلقات برقرار کرنے کا اقدام قابل مذمت ہے۔

المسیرہ کی رپورٹ کے مطابق یمن کی اسلامی اور عوامی تنظیم انصار اللہ کے سربراہ سربراہ عبدالملک بدرالدین الحوثی نے عید میلاد النبی (ص) کے موقع پر فلسطینی مزاحمت کی حمایت کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ یمن کی اسلامی تنظیم انصار اللہ، عرب حکمرانوں کی طرف سے اسرائیل کے ساتھ تعلقات برقرار کرنے کے اقدام کی مذمت کرتی ہے۔

انھوں نے عید میلاد النبی کے موقع پر مسلمانوں کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہا کہ ہم خاتم الانبیاء اور سید الانبیاء کی ولادت باسعادت کے موقع پر مسلمانوں کو مبارکباد پیش کرتے ہیں۔

عبد الملک حوثی نے یمنی عوام کے خلاف امریکی، سعودی اور اماراتی بھیانک جرائم کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ شمشیر پر خون کی فتح یقینی ہے اور مصیبتوں پر صبر کرنے والی قوم ہی کامیاب ہوتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ سعودی عرب اور اس کے آقاؤں کو یمن جنگ میں شکست نصیب ہوگی۔

واضح رہے کہ سعودی عرب نے امریکا اور اسرائیل کی حمایت  سے اور اتحادی ملکوں کے ساتھ مل کر چھبیس مارچ دوہزار پندرہ سے یمن پر وحشیانہ جارحیتوں کا سلسلہ شروع کر رکھا ہے ۔ اس دوران سعودی حملوں میں دسیوں ہزار یمنی شہری شہید اور زخمی ہوئے ہیں جبکہ دسیوں لاکھ یمنی باشندے اپنے گھر بار چھوڑنے پر مجبور ہوئے ہیں ۔

یمن کا محاصرہ جاری رہنے کی وجہ سے یمنی عوام کو شدید غذائی قلت اور طبی سہولتوں اور دواؤں کے فقدان کا سامنا ہے ۔

 سعودی عرب نے غریب اسلامی ملک یمن کی بیشتر بنیادی تنصیبات اسپتال اور حتی مسجدوں کو بھی منہدم کردیا ہے  لیکن اس کے باوجود سعودی عرب یمن پر مسلط کردہ جنگ میں اپنے اہداف تک پہنچنے میں بری طرح ناکام ہوگیا ہے۔

 

Nov ۲۱, ۲۰۱۸ ۱۷:۱۴ Asia/Tehran
کمنٹس