Mar ۰۴, ۲۰۱۹ ۱۴:۱۰ Asia/Tehran
  • شام میں امریکی جنگی طیاروں کا فاسفورس بموں سے حملہ

امریکا کے جنگی طیاروں نے ایک بار پھر شام میں اپنی فضائی جارحیت کے دوران ممنوعہ فاسفورس بم استعمال کئے ہیں۔ شامی ذرائع ابلاغ نے بھی خبر دی ہے کہ قنیطرہ کے مضافات پر صیہونی فوج نے حملہ کیا ہے۔

شام کی خبررساں ایجنسی سانا نے خبردی ہے کہ نام نہاد داعش مخالف امریکی اتحاد کے جنگی طیاروں نے مشرقی شام کے صوبے دیرالزور میں الباغورعلاقے پر ممنوعہ فاسفورس بموں سے حملہ کیا ہے-

اس حملے میں متعدد شامی شہری مارے گئے ہیں جن میں متعدد خواتین اور بچے بھی شامل ہیں-

امریکی اتحاد کے جنگی طیاروں نے پہلے بھی شام کے مختلف علاقوں منجملہ دیرالزور پر ممنوعہ فاسفورس بموں سے حملہ کیا تھا- ان حملوں میں دسیوں عام شہری مارے گئے ہیں-

شام کی حکومت نے بارہا اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل اور سلامتی کونسل کے نام الگ الگ خطوط ارسال کر کے یہ مطالبہ کیا ہے کہ شام میں امریکی جارحیت کو بند کرایا جائے-

امریکا نے گذشتہ برسوں کے دوران دہشت گرد گروہوں کو نشانہ بنانے کے بہانے شام اور عراق میں زیادہ ترعام شہریوں پر حملے کئے ہیں-

نام نہاد داعش مخالف اتحاد سابق امریکی صدر باراک اوباما کے دور حکومت میں عراق اور شام میں سرگرم دہشت گرد گروہوں کا مقابلہ کرنے کے بہانے بنایا گیا تھا-

جبکہ سرکاری رپورٹوں میں یہ بات کھل کرکہی گئی ہے کہ امریکا، اس کے مغربی اورعرب اتحادیوں نے ہی دہشت گرد گروہوں منجملہ داعش کو مالی اور اسلحہ جاتی مدد فراہم کی تھی اور سابق امریکی وزیر خارجہ ہیلری کلنٹن اور موجودہ صدر ٹرمپ نے اس بات کا اعتراف بھی کیا ہے کہ داعش کو امریکا نے بنایا ہے-

اس درمیان شامی ذرائع ابلاغ نے خبر دی ہے کہ صیہونی حکومت کی فوج نے شام کے شہر قنیطرہ کے مضافات میں حملہ کیا ہے- صیہونی حکومت کی فوج نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ اس نے قنیطرہ کے مضافاتی علاقے حضر پر حملہ کیا ہے البتہ اس حملے میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا-

صیہونی حکومت نے گذشتہ گیارہ فروری کو بھی صوبہ قنیطرہ کے کئی علاقوں پر میزائلوں اور مارٹر گولوں سے حملہ کیا تھا جس میں مالی نقصان ہوا تھا-

اسرائیل دہشت گردوں کی حمایت میں ہمیشہ شام کے مختلف علاقوں میں جارحیت کرتا ہے اور اس نے بین الاقوامی قوانین کی خلاف ورزی کرتے ہوئے دو ہزار انیس میں بھی اب تک تین بار شام کے مختلف علاقوں میں جارحیت کی ہے۔

 

ٹیگس

کمنٹس