Mar ۱۲, ۲۰۲۰ ۱۶:۳۹ Asia/Tehran
  • سعودی عرب کا G20 اجلاس کورونا کی بھینٹ چڑھا

سعودی حکومت کی جانب سے اس ملک میں کورونا وائرس پھیلنے کی خبریں چھپانے کی ہر ممکن کوشش کے باوجود گروپ بیس کا اجلاس منسوخ ہوگیا ہے۔

رویٹرز کی رپورٹ کے مطابق گروپ بیس کے اجلاس کی انتظامیہ نے کورونا وائرس پھیلنے کی بنا پر سعودی عرب میں رکن ممالک کے وزرائے زراعت کا اجلاس نامعلوم مدت کے لئے ملتوی کر دیا ہے ۔جی 20  کے وزرائے زراعت کا اجلاس سعودی عرب میں سترہ سے انیس مارچ تک منعقد ہونے والا تھا۔

سعودی عرب مغربی ایشیا کا وہ پہلا ملک ہے جہاں کورونا وائرس پھیلنے کی رپورٹیں ملی تھی تاہم آل سعود حکومت نے اسے چھپانے کی بھرپور کوشش کی۔ سعودی حکومت کا تجارتی لین دین زیادہ تر چین اور مشرقی ایشیا کے بعض دیگر ممالک کے ساتھ رہا ہے، مگر اس کے باوجود وہ ایران کے خلاف کورونا کو ایک سیاسی حربے کے طور پر استعمال کرنے میں لگا ہوا ہے۔

سعودی عرب نے مختلف ملکوں منجملہ پاکستان کے لئے اپنی ہوائی سرحدیں بند کردی ہیں۔ ایک طرف سعودی عرب اپنے ملک میں کورونا مریضوں کی صحیح تعداد بتانے سے اجتناب کر رہا ہے ،تو دوسری طرف بعض دیگر عرب ممالک میں بھی اس وائرس میں مبتلاء مریضوں کی تعداد میں اضافہ ہوتا جا رہا ہے۔

بحرین کی سرکاری نیوز ایجنسی بنا کی رپورٹ کے مطابق بحرین کی وزارت صحت نے ملک میں کورونا کے ستتر نئے مریضوں کی خبر دی ہے اور اس طرح بحرین میں ایک سو نواسی افراد کورونا میں مبتلا ہو چکے ہیں۔

قطر کے حکام نے بھی اعلان کیا ہے کہ کورونا کے دوسو اڑتیس نئے مریضوں کی تشخیص کے بعد ملک میں کورونا کے مریضوں کی تعداد دوسو باسٹھ ہوگئی ہے۔

لبنانی ذرائع نے بھی ملک میں کورونا کے مریضوں کی تعداد میں اضافے کی خبر دی ہے اور اعلان کیا ہے کہ پانچ نئے کورونا مریضوں کی تصدیق ہو چکی ہے جس کے بعد کورونا مریضوں کی تعداد اکسٹھ تک جا پہنچی ہے۔

کورونا وائرس کی روک تھام کے لئے لبنان کے تمام ریسٹورنٹ جمعرات سے بند رہیں گے۔ لبنان نے کورونا وائرس کو روکنے کے لئے اکثر اسکولوں اور یونیورسٹیوں کو بھی بند کردیا ہے۔

درایں اثنا کویت کے انٹرنیشنل ہوائی اڈے سے پرواز کرنے والی تمام پروازیں جمعے سے منسوخ کر دی جائیں گی۔ کویت کی وزارت صحت نے منگل کو کورونا وائرس کے مریضوں کی تعداد بہتر اعلان کی تھی۔ 

 

ٹیگس

کمنٹس