• صیہونی حکومت کی موجودہ پارلیمنٹ میں سب سے زیادہ   نسل پرستانہ قوانین کی منظوری

صیہونی حکومت کی موجودہ پارلیمنٹ نے فلسطینیوں کے خلاف نسل پرستانہ قوانین کی سب سے زیادہ منظوری دی ہے

 فرانس پریس کی رپورٹ کے مطابق مدار نامی ایک فلسطینی سینٹر نے اپنی ایک رپورٹ میں کہا ہے کہ مارچ دوہزار پندرہ کے انتخابات کے بعد تشکیل پانے والی صیہونی پارلیمنٹ نے اب تک پچیس نسل پرستانہ قوانین کی منظوری دی ہے جن میں پندرہ قوانین ابھی منظوری کے مرحلے میں ہیں جبکہ ابھی مزید ایک سو چھتیس نسل پرستانہ قوانین پارلیمنٹ کے ایجنڈے میں ہیں اور منظور ہونے ہیں -

اس رپورٹ کے مطابق یہ قوانین اسرائیل کی نسل پرستانہ پالیسیوں میں شدت کی عکاسی کرتے ہیں اور تمام شواہد سے پتہ چلتا ہے کہ آئندہ انتخابات تک منظور ہونے والے نسل پرستانہ قوانین کی تعداد میں غیرمعمولی اضافہ ہوگا- اس رپورٹ کے مطابق گذشتہ دو برسوں میں صیہونی پارلیمنٹ میں منظور ہونے والے قوانین کا محور، فلسطینی زمینوں پر یہودی بستیوں کی تعمیرکو جاری رکھنا ، فلسطینی قیدیوں کی رہائی کی مخالفت اور اجازت نامہ نہ ہونے کے بہانے فلسطینی زمینوں پر ہرطرح کی تعمیرات کو روکنا ہے -

Apr ۲۰, ۲۰۱۷ ۱۰:۴۲ UTC
کمنٹس