Mar ۱۴, ۲۰۱۹ ۰۸:۴۳ Asia/Tehran
  • مشرقی اور مغربی سرحدوں پر چیلنجز کا سامنا: پاکستان

پاکستان کے وزیرخارجہ نے دعوی کیا ہے کہ پاکستان کو مشرقی اور مغربی سرحدوں پر چیلنجز کا سامنا ہے۔

 پاکستان کے وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے اسلام آباد میں عالمی لیڈرزکانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے دعوی کیا کہ مشرقی اور مغربی سرحدوں پر چیلنجز کا سامنا ہے تاہم مشرقی سرحد پر ہماری حکومت شروع سے امن اور مذاکرات کی بات کر رہی ہے۔

شاہ محمود قریشی نےعالمی لیڈرزکانفرنس میں 25 ممالک کے 60 وفود کی شرکت کوخوش آئند قرار دیتے ہوئے کہا کہ 26 مارچ کو یورپی یونین کی خارجہ امور کی سربراہ فیڈریکاموگیرینی پاکستان آرہی ہیں اوریورپی یونین اورپاکستان کے مابین اسٹریٹیجک شراکت داری پر مفاہمت کی یادداشتوں پر دستخط کیے جائیں گے۔

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ ہم جانتے ہیں کہ افغانستان میں امن ہمارے خطے کی تعمیروترقی کے لئے ناگزیر ہے اس لیے ہم افغان امن عمل کے لیے سہولت کار کا کردار ادا کررہے ہیں، مشرقی اور مغربی سرحدوں پر چیلنجز کا سامنا ہے تاہم مشرقی سرحد پر ہماری حکومت شروع سے امن اور مذاکرات کی بات کر رہی ہے۔

کرتارپور راہداری کھولنے کا فیصلہ بھی اسی سلسلے کی ایک کڑی ہے. چین کے ساتھ سی پیک کے دوسرے مرحلے کا آغاز بھی اسی زمرے میں آتا ہے تاکہ ہم خصوصی اقتصادی زونز قائم کریں اور پاکستان میں سرمایہ کاری کا فروغ ہو۔

ٹیگس

کمنٹس