امریکی وزیر جنگ نے علاقے میں اپنے کرتوتوں کی ذمہ داری دوسروں پر عائد کرتے ہوئے صیہونی حکومت کی سیکورٹی کے وعدے پر کاربند رہنے پر تاکید کی ہے۔

 امریکی وزیر جنگ جیمز میٹس نے تل ابیب میں اسرائیلی وزیر جنگ اوگدور لیبرمین کے ساتھ ایک مشترکہ پریس کانفرنس میں کہا کہ امریکہ اسرائیل کو تمام خطرات سے محفوظ رکھنے کا پابند ہے-

جیمزمیٹس نے خان شیخون میں مشکوک کیمیائی حملے کے بارے میں دعوی کیا کہ شامی حکومت اپنے کیمیائی ہتھیاروں کو بچائے ہوئے ہے-

حکومت شام نے امریکہ اور روس کے تعاون کے نتیجے میں اپنے کیمیائی ہتھیار اقوام متحدہ کے سپرد کر دیئے ہیں-

امریکی وزیرجنگ نے مشترکہ جامع ایکشن پلان کی جانب اشارہ کیا اور ایک بار پھر اس سلسلے میں اپنے ملک کی وعدہ خلافیوں کی جانب کوئی اشارہ کئے بغیر دعوی کیا کہ ایران کی سرگرمیوں سے ایٹمی سمجھوتے کی خلاف ورزی ہوئی ہے اور اس بنا پر ایٹمی سمجھوتے پر نظرثانی ضروری ہے-

اس پریس کانفرنس میں اسرائیلی وزیر جنگ اویگدور لیبرمین نے امریکی حکام کی ہاں میں ہاں ملاتے ہوئے دہشت گرد گروہوں کو وجود میں لانے اور علاقے و دنیا کی سیکورٹی کو خطرے میں ڈالنے میں تل ابیب اور واشنگٹن کے کردار کو نظرانداز کرتے ہوئے دعوی کیا کہ ایران علاقے میں اصلی خطرہ ہے-

 

Apr ۲۱, ۲۰۱۷ ۱۴:۱۲ UTC
کمنٹس