• ٹرمپ کے دورے کے موقع پر میزائل حملہ

یہ حملہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے سعودی عرب پہنچنے سے صرف چند گھنٹے قبل کیا گیا۔

یمنی فوج کے میزائل یونٹ نے سعودی دارالحکومت ریاض کو برکان-2 نامی بیلیسٹک میزائل سے نشانہ بنایا ہے۔

یہ ریاض پر برکان-2 میزائل سے تیسرا حملہ تھا جو امریکی صدر کے ریاض پہنچنے سے پہلے انجام دیا گیا ہے۔

یمن کی فوج کے ترجمان نے کہا ہے کہ اس حملے کا مقصد ایک واضح اور صاف لفظوں میں پیغام پہنچانا تھا کہ یمن اپنے دشمن کے حملوں اور جارحیت کا منہ توڑ جواب دینے کے لئے مکمل طور پرآمادہ ہے۔

اس سے پہلے فروری میں یمنی فوجیوں نے مغربی ریاض میں ایک فوجی اڈے پر بھی بیلیسٹک میزائل داغا تھا۔ اس کے بعد 18مارچ کو بھی یمن کی مشترکہ افواج نے سعودی شاہ کے کئی ممالک کے دورے سے واپسی کے فورا بعد یمن پر سعودی جارحیت کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے ریاض شہر میں واقع ملک سلمان ائیربیس کو بیلیسٹک میزائل سے ہدف بنایا تھا۔

المیادین چینل کے مطابق سعودی فوج نے دعوی کیا کہ ریاض کے نزدیک ایک یمنی میزائل کو مار گرایا گیا ہے۔

 

May ۲۰, ۲۰۱۷ ۰۷:۱۶ UTC
کمنٹس