• شمالی کوریا نے امریکی درخواستیں مسترد کردیں

سی این این نے خبردی ہے کہ امریکا نے شمالی کوریا سے کئی بار درخواست کی وہ اپنے ایٹمی ہتھیار تباہ کردے لیکن پیونگ یانگ نے امریکا کی ایک بھی نہ سنی اور ساری درخواستیں مسترد کردیں۔

سی این این نے متعدد سفارتی ذرائع کے حوالے سے خبردی ہے کہ امریکا نے شمالی کوریا سے اپنے ایٹمی ہتھیار تباہ کرنے کے لئے کئی بار درخواست کی تھی لیکن پیونگ یانگ نے امریکی درخواستوں کو مسترد کردیا۔

سفارتی ذرائع کا کہنا ہے کہ امریکا نے شمالی کوریا کے ایٹمی ہتھیاروں کی نابودی کے لئے مذاکرات شروع کرنے کے لئے کئی بار درخواست کی لیکن شمالی کوریا نے ان درخواستوں کو خطرناک مافیا گروہوں کی تجاویز سے تشبیہ دیتے ہوئے انہیں قبول کرنے سے انکار کردیا۔

سی این این نے خبردی ہے کہ ٹرمپ کی ڈیپلومیسی جو راکٹ کی طرح تیزی سے آگے بڑھی تھی اس تعطل کی وجہ سے منہ کے بل زمین پر جاگری اور نتیجے میں اب شمالی کوریا کے ساتھ مذاکرات میں ویسی ہی دشواری پیدا ہوگئی ہے جو امریکا کی سابقہ حکومتوں اور شمالی کوریا کے درمیان پائی جاتی تھی۔  امریکی صدر ٹرمپ نے گذشتہ جون کے مہینے میں شمالی کوریا کے رہنما سے ملاقات کے بعد جو مبہم وعدہ کیا تھا وہ اب  سفارتی سرگرمیوں کے ٹھپ  پڑجانے کے بعد ختم ہوگیا ہے۔

امریکی صدر ٹرمپ اور شمالی کوریا کے رہنما کیم جونگ اون نے جس مختصر دستاویز پر دستخط کئے تھے اس میں آئندہ مذاکرات یا ملاقات کا کوئی وقت نہیں بیان کیا گیا تھا اسی لئے دونوں ہی فریق اس دستاویز کے متن کی اپنے اپنے اعتبار سے تشریح کر رہے ہیں۔

شمالی کوریا کے موقف پر نظر رکھنے والے ایک باخبر ذریعے کا کہنا ہے کہ پیونگ یانگ نے کہا ہے کہ وہ امریکا کے ساتھ اسی صورت میں مذاکرات کرے گا جب واشنگٹن شمالی کوریا کے ساتھ ایک صلح معاہدے پر دستخط کرنے اور ایک دلیرانہ قدم اٹھانے پر تیار ہوگا۔

دوسری جانب امریکا چاہتاہے کہ شمالی کوریا جلد سے جلد ایٹمی ہتھیاروں کی تباہی کے لئے بڑا قدم اٹھائے۔ اس درمیان شمالی کوریا کی وزارت خارجہ نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ پیونگ یانگ کے خلاف پابندیاں عائد کرکے امریکا جو دباؤ ڈالنا چاہتا ہے اس سے جزیرہ نمائے کوریا میں ایٹمی ترک اسلحہ کا عمل رک جائے گا۔

شمالی کوریاکی وزارت خارجہ نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ امریکا جب تک مذاکرات کی اصل شرط یعنی دو طرفہ احترام کے اصول کو تسلیم نہیں کرے گا اس وقت تک اس کو شمالی کوریا سے یہ امید بھی نہیں رکھنی چاہئے کہ پیونگ یانگ اپنا ایٹمی پروگرام ختم کردے گا یا ایٹمی ہتھیاروں کو تباہ کردے گا۔ شمالی کوریا نے ساتھ ہی پیونگ یانگ کے ایٹمی ہتھیاروں کی تباہی کے بارے میں اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل کے موقف کی بھی مذمت کی۔

Aug ۱۲, ۲۰۱۸ ۱۹:۵۶ Asia/Tehran
کمنٹس