• پیرس میدان جنگ، پرتشدد مظاہرے دکانیں اور کاریں نذرآتش

فرانس میں پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے اور حکومت کی معاشی پالیسیوں کے خلاف مسلسل چوتھے ہفتے بھی پُرتشدد مظاہرے کیے گئے۔

خبر ایجنسی کے مطابق فرانس میں یلو ویسٹ موومنٹ کی طرف سے کل بھی ملک گیر احتجاجی مظاہرے کیے گئے جن میں لاکھوں افراد نے حصہ لیا، اس دوران پیرس ایک بار پھر میدان جنگ بنا نظر آیا اس موقع پرسخت سیکورٹی انتظامات کئے گئے تھے۔

مظاہرین نے کاریں اور رکاوٹیں نذر آتش کیں، شیشے توڑے، کئی دکانیں لوٹ لی گئیں اور املاک کو نقصان پہنچایا گیا۔

پولیس نے انہیں منتشر کرنے کے لیے آنسو گیس اور پانی کی توپوں کا استعمال کیا۔

مظاہرین نے پیرس میں موٹر سائیکل ریلی بھی نکالی، ان کا مطالبہ تھا کہ صدر میکرون استعفا دیں، مظاہروں کے پیش نظر پیرس میں دکانیں، کیفے، شاپنگ مالز، ایفل ٹاور اور کئی میٹرو اسٹیشن بند رہے۔

فرانسیسی وزیر داخلہ کا کہنا ہے کہ ہنگامہ آرائی میں 20 پولیس اہل کاروں سمیت 140 افراد زخمی ہوئے، جبکہ ایک ہزار مظاہرین کو گرفتار کیا گیا جن میں سے 650 افراد پیرس میں پکڑے گئے۔

ٹیگس

Dec ۰۹, ۲۰۱۸ ۰۷:۳۵ Asia/Tehran
کمنٹس