Sep ۲۰, ۲۰۱۹ ۱۵:۴۲ Asia/Tehran
  • اسرائیل میں مخلوط حکومت کی تشکیل کھٹائی میں

اسرائیل کے بلو اینڈ وائٹ الائنس کے سربراہ بنی گینٹس نے بن یامین نیتن یاھو کے ساتھ مخلوط حکومت کے قیام کو اپنی وزارت عظمی کے عہدے سے مشروط کردیا ہے۔

صیہونی حکومت کے وزیراعظم نیتن یاھو کی جانب سے شکست کے اعتراف اور وسیع البنیاد حکومت کے قیام کی درخواست کے بعد بنی گینٹس نے کہا ہے کہ اگر انہیں وزیر اعظم بنایا جائے تو وہ لیکوڈ پارٹی کے ساتھ اتحاد کے لیے تیار ہیں۔بلو اینڈ وائٹ الائنس کی جانب سے جاری کردہ بیان میں یہ بات زور دے کر کہی گئی ہے کہ لیکوڈ پارٹی، بنی گینٹس کو وزیراعظم کے طور پر قبول کرلے تو اس کے ساتھ اتحاد ہوسکتا ہے۔قابل ذکر ہے کہ صیہونی حکومت کی مرکزی الیکشن کمیٹی کے جاری کردہ نتائج کے مطابق بنی گینٹس کی قیادت والے بلو اینڈ وائٹ الائنس نے پارلیمنٹ کی تینتیس اور نیتن یاھو کی قیادت والی لیکوڈ پارٹی نے بتیس نشستیں حاصل کی ہیں۔اسرائیل میں حکومت بنانے کے لیے ایک سو بیس کے ایوان میں ساٹھ جمع ایک نشستوں کی ضرورت ہوتی ہے جو کوئی بھی پارٹی حاصل نہیں کرپائی۔

ٹیگس

کمنٹس