Feb ۱۴, ۲۰۲۰ ۰۸:۱۳ Asia/Tehran
  • ویلنٹائن ڈے غیراسلامی اور اخلاق سوز مغربی تہوار

محبت کے نام پر 14 فروری کو ویلنٹائن ڈے اسلامی تعلیمات کی کھلم کھلا خلاف ورزی ہے۔

آج کے دور میں محبت کے نام پر ویلنٹائن ڈے منانے کےاس تہوار کا آغاز مغربی ممالک سے ہوا جہاں غیرمسلم مادر پدر آزادی کے ساتھ رہتے ہیں اور فحاشی و عریانی اور جنسی بے راہ روی کو وہاں ہر طرح کا قانونی تحفظ حاصل ہے اور اس تہوار کے منانے کا انداز یہ ہوتا ہے کہ نوجوان لڑکوں اور لڑکیوں کی بے پردگی و بے حیائی کے ساتھ میل ملاپ، تحفے تحائف کا لین دین سے لے کر فحاشی و عریانی کا کھلے عام یا چوری چھپے ارتکاب کیا جاتا ہے۔

علماء کا کہنا ہے کہ اسلام ویلنٹائن ڈے جیسے اخلاق سوز تہواروں کی اجازت نہیں دیتا اور معاشرے کو بے راہ روی اور عریانی و فحاشی سے بچانے کے لئے تمام طبقات اپنا کردار ادا کریں۔ شرم و حیا کا دینی و مشرقی کلچر پھیلانے اور اپنانے کی ضرورت ہے۔

 ویلنٹائن ڈے مسلم نوجوانوں اور مسلم خواتین کے اخلاق تباہ کرنے اور انہیں اسلام سے دُور لے جانے کی گہری سازش ہے۔ اس لئے کہ ویلنٹائن ڈے مسلمانوں کا تہوار نہیں، مسلمان اللہ اور اس کے رسول کی محبت کیساتھ ساتھ اپنے والدین اور بہن بھائیوں سے محبت کریں۔

واضح رہے کہ ویلنٹائن ڈے 14 فروری کو منایا جاتا ہے۔

کمنٹس