Sep ۱۶, ۲۰۱۹ ۱۱:۰۱ Asia/Tehran
  • کشمیر:43 ویں دن بھی دفعہ 144 نافذ، دکانیں اورتجارتی مراکز بند

ہندوستان کے زیر انتظام کشمیر میں حالات بدستور کشیدہ ہیں اور تمام تعلیمی اور کاروباری مراکز بند ہیں۔

ہندوستان کے زیر انتظام کشمیر میں دفعہ 144، 43ویں روز بھی نافذ ہے اور حساس مقامات پرنظم و نسق کی برقراری کے لیے سکیورٹی کے خاص بندوبست کیے گئے ہیں۔ دکانیں اور تجارتی مراکز بند ہیں۔ موبائل اورانٹرنیٹ خدمات معطل ہیں۔ نجی گاڑیاں سڑکوں پر نظرآرہی ہیں لیکن پبلک ٹرانسپورٹ سڑکوں سے غائب ہے۔

انتظامیہ کا دعویٰ ہے کہ وادی کی صورتحال تیزی کے ساتھ بہتری کی جانب گامزن ہے تاہم اس کے برعکس اسٹیٹ روڈ ٹرانسپورٹ کارپوریشن کی بسیں بھی سڑکوں سےغائب ہیں۔ جس کی وجہ سے عام شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔

وادی کے تقریباً تمام تعلیمی اداروں میں درس وتدریس کی سرگرمیاں معطل ہیں۔ اس کے علاوہ سرکاری دفاتر، بنکوں اور نجی دفاتر میں جاری ہڑتال اورمواصلاتی بندش کی وجہ سے معمول کا کام کاج متاثر ہے۔

قابل ذکر ہے کہ وادی کشمیر میں معمول کی زندگی 5 اگست کو اس وقت معطل ہوئی جب مرکزی حکومت نے ریاست کو خصوصی پوزیشن عطا کرنے والی آئین ہند کی دفعہ 370 ہٹادی اور ریاست کو دو حصوں میں تقسیم کرکے مرکز کے زیر انتظام والے علاقے بنانے کا اعلان کیا۔

ٹیگس

کمنٹس