Mar ۲۳, ۲۰۲۰ ۲۲:۲۱ Asia/Tehran
  • کورونا وائرس کے حوالے سے حکومت ہندوستان کے رویئے پر نکتہ چینی

ہندوستان کی کانگریس پارٹی نے کورونا وائرس کے بحران کے دوران، ملک سے سرجیکل ماسک، وینٹی لیٹر اور دیگر ضروری طبی آلات کی برآمد کی اجازت دیئے جانے پر مرکزی حکومت پر سخت تنقید کی ہے۔

ہندوستان کی سرکاری خبررساں ایجنسی یو این آئی کے مطابق کانگریس کے سابق صدر راہل اور رکن پارلیمنٹ راہل گاندھی نے سرجیکل ماسک، وینٹی لیٹر اور دیگر آلات کی برآمدات کی اجازت دینے پر مرکزی حکومت کو آڑے ہاتھوں لیا ہے۔ 
انھوں نے اسے ایک سوچی سمجھی سازش قرار دیا اور سوال کیا کہ صحت کی تنظیم ڈبلیو ایچ او کے مشورے کے بر خلاف یہ قدم کس کے اشارے پر اٹھایا گیا ہے۔
مسٹر راہل گاندھی نے وزیر اعظم نریندر مودی کو خطاب کرتے ہوئے ٹوئٹ کیا ’’عزت مآب وزیراعظم جی، ڈبلیو ایچ او کی وینٹی لیٹر، سرجیکل ماسک کا وافر اسٹاک رکھنے کے مشورے کے برخلاف ہندوستانی حکومت نے انیس مارچ تک ان سبھی چیزوں کی بر آمدات کی اجازت کیوں دی‘‘۔
انہوں نے ملک میں کورونا وائرس پھیلنے کے پیش نظر اِسے ایک مجرمانہ سازش بتایا اور حکومت سے پوچھا ’’یہ کھلواڑ کن طاقتوں کی شہ پر کیا گیا ؟ کیا یہ مجرمانہ سازش نہیں ہے؟‘‘
اس سے قبل کانگریس کے ترجمان رندیپ سنگھ سرجے والا نے بھی ٹوئٹ کر کے حکومت کے اس رویے پر تنقید کی اور الزام لگایا کہ اس نے دس گنا زیادہ قیمت پر اس سامان کو برآمد کیا ہے۔ 

ٹیگس

کمنٹس