Jun ۲۸, ۲۰۱۹ ۱۰:۴۶ Asia/Tehran
  • ایران میں 7 تیر کے شہداء کی برسی

اسلامی جمہوریہ ایران میں آج 28 جون کو 1981 کے شہداء ۳۸ویں برسی منائی جا رہی ہے۔

۲۸جون 1981 کو تہران میں جمھوری اسلامی نامی جماعت کے دفتر میں ہونے والے دہشت گرد گروہ منافقین کی جانب سے کرائے جانے والے ایک خوفناک بم دھماکے میں اس وقت کی عدلیہ کے سربراہ آیت‌ الله محمد حسینی بہشتی سمیت ایران کی 72 اہم سیاسی اورمذہبی شخصیات شہید ہوئے۔ ان شہداء میں 4 وزیر،12 نائب وزراء اور پارلیمنٹ کے تقریبا 30 نمائندے بھی شامل تھے۔

۲۸ جون 1981 کو تہران میں دہشت گردی کا یہ المناک سانحہ اسلامی انقلاب کی کامیابی کے ابتدائی برسوں میں رہبر معظم انقلاب اسلامی حضرت آیت الله العظمی سید علی خامنه‌ ای پر تہران کی ابوذر مسجد میں ہونے والے حملے کے صرف ایک روز بعد رونما ہوا۔

ایران میں امریکی حمایت سے 1981 اور1987 میں دہشت گردی کے کئی واقعات رونما ہوئے ۔ اسی کے ساتھ ساتھ عراق کی بعثی حکومت کی جانب سے سردشت میں کیمیائی حملہ، امریکی بحری بیڑے کی جانب سے ایران کے مسافر طیارے کو تباہ کرنے کی کارروائی جس میں 290 افراد شہید ہوئے امریکہ کے غیر انسانی اقدامات کی ایک جھلک ہے۔ اس کے علاوہ عراق پر امریکی حملے اور صدام کی حکومت کے سرنگوں ہونے کے بعد بھی امریکہ اور یورپی ممالک دہشت گرد گروہ منافقین کی حمایت کر رہے ہیں۔

ٹیگس

کمنٹس