Sep ۳۰, ۲۰۲۰ ۲۱:۵۶ Asia/Tehran
  • ایران سے شکست کھا چکے سعودی عرب نے تہران پر پھر الزامات عائد کئے

سعودی عرب نے ایک بار پھر ایران پر بے بنیاد الزامات ‏عائد کئے ہیں۔

سعودی عرب کے حکام ہر کچھ دن بعد ایران کے خلاف بے بنیاد الزامات کی تکرار کرکے خود کو علاقے کو غیر مستحکم کرنے والے اقدامات اور پیٹرو ڈالر نیز تکفیری نظریات سے جنم لینے والی دہشت گردی سے دور بتانے کی کوشش کرتے ہیں۔

اسی عمل کے تحت سعودی عرب کے حکام نے پہلے سے تیار ایک سازش پر عمل کرتے ہوئے اپنے ملک میں دہشت گردانہ اقدامات کے الزام میں دس افراد کی گرفتاری کی اطلاع دی اور بغیر ثبوت اور دستاویز کے دعوی کیا کہ ان میں سے تین نے ایران میں ٹریننگ حاصل کی ہے۔

ایران کے خلاف بے سر و پیر کے دعوے کرنا، تہران کے خلاف ریاض کی مستقل پالیسی میں بدل چکا ہے۔

انسٹاگرام پر آپ ہمیں فالو کر سکتے ہیں

سعودی عرب کے فرمانروا سلمان بن عبد العزیز نے بھی حال ہی میں اقوام متحدہ کے سالانہ اجلاس میں ایران پر کشیدگی پیدا کرنے والی پالیسیاں اختیار کرنے اور دہشت گردی کی حمایت کے الزامات عائد کئے تھے۔

ایران کے خلاف سعودی عرب کا یہ ڈرامہ ایسی حالت میں جاری ہے کہ جب گزشتہ کئی عشروں کے واقعات پر ایک نظر ڈالنے سے یہ واضح ہو جاتا ہے کہ ریاض کے حکام نے مغربی ایشیا کے علاقے میں بہت ہی تباہ کن کردار ادا کیا ہے اور یہ سلسلہ بدستور جاری ہے۔

ٹیگس

کمنٹس