Jul ۲۳, ۲۰۲۰ ۰۹:۱۰ Asia/Tehran

امریکا میں قانونی احتجاج کرنا اور حکومتی پالیسیوں کے خلاف اپنے غم و غصے کا اظہار کرنا جیسے گناہ ہو گیا ہو۔

سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو وائرل ہے جس میں دکھایا گیا ہے کہ امریکی پولیس اہلکار کیسے وحشی طریقے سے ایک شخص کو مار رہے ہیں۔

تجزیہ نگاروں کا خیال ہے کہ صدر ٹرمپ کی دھمکی اور حکومت کی جانب سے کھلی چھوٹ ملنے کے بعد مظاہرین کی سرکوبی میں شدت آگئی ہے۔

25 مئی سے شروع ہونے مظاہرے بدستور پوری طاقت کے ساتھ جاری ہيں۔ امریکا کی کئی ریاستوں کے حالات کنٹرول سے باہر ہیں۔

پچیس مئی کو امریکی ریاست مینے سوٹا کے شہر مینیا پولیس شہر میں سفید فام پولیس افسر کے ہاتھوں سیاہ فام امریکی شہری جارج فلوئد کے قتل کے بعد امریکا کے ساتھ ہی  پورے یورپ میں بھی نسل پرستی کے خلاف مظاہروں کی لہر آ گئی ہے۔ اسی کے ساتھ نسل پرستی کے واقعات میں اضافہ بھی دیکھنے کو مل رہا ہے۔

 

دنیا بالخصوص عالم اسلام اور علاقے کی اہم خبروں کے لیے ہمارا واٹس ایپ گروپ جوائن کیجئے!

Whatsapp invitation link

7: https://chat.whatsapp.com/CHPuYaKdUxCGK4bzQDsJf4

 

ٹیگس

کمنٹس