Jul ۱۲, ۲۰۱۹ ۲۱:۱۴ Asia/Tehran
  • آیت اللہ ابراہیم زکزکی کی رہائی کے لیے پاکستان میں مظاہرہ

پاکستان کے دارالحکومت اسلام آباد میں، نماز جمعہ کے بعد نائیجیریا کی اسلامی تحریک کے بانی آیت اللہ زکزکی کی رہائی کے لئے مظاہرہ کیا گیا۔

اسلام آباد سے ہمارے نمائندے کی رپورٹ کے مطابق مجلس وحدت المسلمین کی اپیل پر نماز جمعہ کے بعد، نائیجیریا میں اسلامی تحریک کے بانی آیت اللہ زکزکی کی حالت نازک ہونے کے باوجود انہیں جیل سے رہا نہ کئے جانے کے خلاف مرکزی امام بارگاہ جی سکس ٹو سے ایک احتجاجی جلوس نکالا گیا ۔
مظاہرین نے نائیجیریا کی حکومت سے آیت اللہ زکزکی کو فوری طور پر رہا کرنے کا مطالبہ کیا ۔ مظاہرین نے حکومت پاکستان سے بھی مطالبہ کیا کہ آیت اللہ زکزکی کی رہائی کے لئے سفارتی کوششیں کی جائیں۔ مظاہرین سے مجلس وحدت المسلمین کے مختلف رہنماؤں نے خطاب کیا ۔ مقررین نے اقوام متحدہ سے مطالبہ کیا کہ آیت اللہ زکزکی کی رہائی کے لئے نائیجیرین حکومت پر دباؤ ڈالا جائے ۔ مظاہرین نے ایسے بینر اٹھارکھے تھے جن پر آیت اللہ زکزکی کی رہائی کے حق میں نعرے درج تھے۔
آیت اللہ زکزکی کی آزادی کے لئے گزشتہ کئی دن سے نائیجیریا کے مختلف شہروں میں عوام کے مظاہروں کا سلسلہ جاری ہے۔
یاد رہے کہ نائیجیریا کی فوج نے تیرہ دسمبر دو ہزار پندرہ کو شہر زاریا کے حسینئے پر حملہ کرکے درجنوں عزاداروں کو شہید اور آیت اللہ زکزکی اور ان کی اہلیہ کو زخمی حالت میں گرفتار کرکے جیل میں بند کردیا ۔
دسمبر دو ہزار سولہ میں نائیجیریا کی سپریم کورٹ نے آیت اللہ زکزکی اور ان کی اہلیہ کو جیل سے رہا کرنے کا حکم صادر کیا تھا لیکن فوج نے اس حکم پر عمل نہیں کیا اور آیت اللہ زکزکی کو بدستور میں جیل میں بند رکھا ہے ۔
آیت للہ زکزکی کے گھر والوں نے گزشتہ دنوں اعلان کیا کہ جیل میں ان کی جسمانی حالت خراب ہے اور انہیں فوری طور پر طبی امداد کی ضرورت ہے ۔ نائیجیریا کی اسلامی تحریک نے اعلان کیا ہے کہ حکومت نے آیت اللہ زکزکی کو جیل میں سلو پوائزن دیا ہے۔

کمنٹس