Feb ۱۴, ۲۰۲۰ ۱۷:۰۰ Asia/Tehran
  • فاطمہ سلام اللہ علیہا ۔ پوسٹر/ احادیث

صدیقۂ کبریٰ، دختر مصطفیٰ (ص)، ہمسر مرتضیٰ (ع)، حضرت فاطمہ زہرا سلام اللہ علیھا ۲۰جمادی الثانی بعثت کے پانچویں برس مکہ مکرمہ میں اس دنیا میں تشریف لائیں اور سرکار دوعالم کی آغوش میں پرورش پائی اور اعلی الہی تعلیمات کی حامل بنیں اور ۳ جمادی الثانی ۱۱ ہجری قمری کو صرف اٹھارہ سال کی عمر میں آپ نے شہادت پائی۔

تسبیح  زهرا (ع) عفو و بخشش کا سبب

قال الصادق علیہ السلام:

مَنْ سَبَّحَ تَسْبِیحَ فَاطِمَةَ (ع)  قَبْلَ أَنْ یثْنِی رِجْلَیهِ مِنْ صَلاَةِ اَلْفَرِیضَةِ غُفِرَ لَهُ

امام صادق علیہ السلام فرماتے ہیں:

جو شخص واجب نماز کے بعد قبلہ سے منھ موڑ لینے سے قبل تسبیح فاطمہ کے ذریعے خدائے سبحان کی حمد و ثنا کرے تو خداوند عالم اسکے گناہوں کو معاف کر دیتا ہے۔

مجلسی، بحارالانوار، ج83، ص332

 

خندہ پیشانی

قالت فاطمه الزهرا علیہا سلام:

بِشْرٌ فِی وَجْهِ اَلْمُؤْمِنِ یوجِبُ لِصَاحِبِهِ اَلْجَنَّةَ وَ بِشْرٌ فِی وَجْهِ اَلْمُعَانِدِ اَلْمُعَادِی یقِی صَاحِبَهُ عَذَابَ اَلنَّارِ.

حضرت فاطمه علیہا سلام فرماتی ہیں:

مومن کے ساتھ خندہ پیشانی سے پیش آنا جنت کا باعث ہے، جبکہ معاند اور حد سے تجاوز کرنے والے شخص کے ساتھ اگر خندہ پیشانی سے پیش آیا جائے تو جہنم سے نجات کا سبب ہے۔

مجلسی، بحارالانوار، ج73، ص401

 

حضرت فاطمہ علیہا سلام کی غیرت و حیا

قال علی بن ابیطالب علیہ السلام:

اِسْتَأْذَنَ أَعْمَی عَلَی فَاطِمَةَ (ع) فَحَجَبَتْهُ فَقَالَ رَسُولُ اَللَّهِ ص لَهَا لِمَ حَجَبْتِیهِ وَ هُوَ لاَ یرَاک فَقَالَتْ (ع) إِنْ لَمْ یکنْ یرَانِی فَإِنِّی أَرَاهُ وَ هُوَ یشَمُّ اَلرِّیحَ فَقَالَ رَسُولُ اَللَّهِ ص أَشْهَدُ أَنَّک بَضْعَةٌ مِنِّی.

امیر المومنین علی علیہ السلام فرماتے ہیں:

ایک نابینا شخص نے فاطمہ (ع) سے ملنے کی اجازت طلب کی تو آپ نے اسے اجازت تو دی مگر حجاب اور پردے کے ساتھ اُس کے سامنے گئیں۔ پیغمبر خدا (ص) نے فرمایا کہ وہ شخص تو تمہیں نہیں دیکھ رہا تھا، تو تم نے کیوں پردہ کیا؟ آپ نے فرمایا: اگرچہ وہ مجھے نہیں دیکھ رہا تھا، مگر میں تو اسے دیکھ رہی تھی اور وہ میری بو محسوس کر رہا تھا۔ آنحضرت نے (اپنی بیٹی کا جواب سن کر) فرمایا: میں گواہی دیتا ہوں کہ تم میرے جگر کا ٹکرا ہو!

مجلسی، بحارالانوار، ج44، ص9

 

حضرت فاطمہ علیہا سلام اور مہمان نوازی

قالت فاطمه الزهرا علیہا سلام:

مَنْ کانَ یؤْمِنُ بِاللَّهِ وَ اَلْیوْمِ اَلْآخِرِ فَلْیکرِمْ ضَیفَهُ

حضرت فاطمه علیہا سلام فرماتی ہیں:

جو شخص اللہ اور روز آخرت پر ایمان رکھتا ہے، اسے چاہئے کہ وہ اپنے مہمان کا احترام کرے۔

وسائل الشیعة، ج13، ص126

 

ماں کی عظمت

 حضرت فاطمه عليها السلام

 إلزَم رِجلَها ؛ فَإنَّ الجَنَّةَ تَحتَ أقدامِها ؛

حضرت فاطمه زہرا علیہا سلام فرماتی ہیں:

اپنی ماں کے خدمتگزار رہو، کیونکہ جنت ماں کے قدموں تلے ہے۔

(کنزالعمال) حدیث: ۴۵۴۴۳

 

 

ٹیگس

کمنٹس