• صیہونی سفارتکار میڈیا کے سامنے ترکی سے بے دخل

ترکی نے اسرائیل کے سفارتکار کو میڈیا کی موجودگی میں ایئرپورٹ سے بے دخل کردیا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق فلسطین میں اسرائیلی بربریت کے تازہ واقعات کے بعد ترکی اور اسرائیل کے درمیان کشیدگی میں اضافہ ہوگیا ہے اور امریکا کی جانب سے اپنا سفارتخانہ مقبوضہ بیت المقدس منتقل کرنے کے بعد ترکی نے اپنا سفیر فوری طور پر واپس بلاتے ہوئے اپنے ملک سے اسرائیلی سفارت کار کو چلے جانے کا حکم دیا۔

ترکی نے اسرائیلی سفارت کار کی ملک بدری کے واقعے کی کوریج کے لیے میڈیا کو بلوالیا اور اسرائیلی سفارت کار کی عام افراد کی طرح تلاشی لے کر اسے ایئرپورٹ سے روانہ کردیا جبکہ یہ مناظر براہ راست دکھائے گئے۔

دوسری جانب امریکی سفارت خانے کی تل ابیب سے مقبوضہ بیت المقدس منتقلی کے خلاف عالمی سطح پر احتجاج کا سلسلہ جاری ہے اور کل تہران میں امریکہ کے سابق جاسوسی کے اڈے پر تہران کے طلباء اور عوام کی بڑی تعداد نے احتجاجی مظاہرے کئے جبکہ غزہ اور فلسطین کے دوسرے علاقوں میں فلسطینی خواتین، بزرگ اور بچوں نے بھرپور احتجاج کیا اور اسرائیل و امریکی گٹھ جوڑ کے خلاف نعرے بازی کرتے ہوئے غزہ کی سرحد پر پہنچ گئے، قابض اسرائیلی فوج نے مظاہرین پر براہ راست فائرنگ کر کے 68 افراد کو شہید اور 3 ہزار افراد کو زخمی کردیا تھا، فلسطین میں گزشتہ روز یوم نکبت منایا گیا۔

واضح رہے کہ ایران فلسطین میں اسرائیلی جارحیت کے خلاف آواز اُٹھانے والی سب سے موثر آواز ہے، ایران نے دنیا کے ہر بڑے فورم پر اسرائیلی بربریت کے خلاف صدائے احتجاج بلند کی جبکہ ترکی نے او آئی سی کا اجلاس طلب کر رکھا ہے۔

ٹیگس

May ۱۷, ۲۰۱۸ ۰۹:۲۲ Asia/Tehran
کمنٹس