Feb ۱۵, ۲۰۲۰ ۰۹:۰۷ Asia/Tehran
  • امریکہ کا افغانستان سے فوجی انخلا

ٹرمپ نے دعوی کیا ہے کہ طالبان اور امریکہ کے مابین مذاکرات کامیاب ہوں گے۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے آئی ہارٹ ریڈیو سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ امریکا افغانستان سے اپنے فوجیوں کو وطن واپس لانے کے لیے طالبان کے ساتھ امن معاہدے کے لیے کام کر رہا ہے اور اب وقت آ گیا ہے کہ امریکا افغانستان سے اپنی فوج واپس بلا لے۔امریکا اور طالبان کے نمائندے تقریبا18 ماہ سے قطر کے دارالحکومت دوحہ میں مذاکرات کر رہے ہیں، جس کے دوران مذاکرات اکثر کشیدگی کا شکار بھی رہے ہیں۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ امریکہ جاری مذاکرات میں زیادہ سے زیادہ مراعات حاصل کرنا چاہتا ہے اور امریکہ کی یہ کوشش ہے کہ ایک جانب افغانستان میں اپنی شکست پر پردہ ڈالے اور دوسری جانب یہ دکھا سکے کہ اسے اس ملک میں شکست نہیں ہوئی بلکہ وہ اپنی مرضی سے نکل رہا ہے اور ٹرمپ اس کارڈ کو صدارتی انتخابات میں کامیابی حاصل کرنے کیلئے استعمال کرنا چاہتا ہے ۔

واضح رہے کہ امریکا افغانستان میں 17 برسوں سے جاری جنگ میں بری طرح شکست کھانے کے بعد اب اس ملک سے دامن بچا کر باہر نکلنا چاہتا ہے جس کے لیے افغان طالبان کے ساتھ قطر میں مذاکرات کا عمل شروع کیا گیا تھا جس کے دوران فریقین نے افغانستان سے امریکی فوجیوں کے انخلا پراتفاق کیا تھا تاہم امریکا چاہتا ہے کہ  طالبان اور کابل حکومت کے مابین کشیدگی باقی رہے تاکہ جس کھیل کو امریکہ نے افغانستان میں شروع کیا ہے اسے پایہ تکمیل تک پہنچایا جا سکے۔

ٹیگس

کمنٹس