• طالبان پرکابل حکومت کے ساتھ مذاکرات کیلئے دباؤ

پاکستان کی قومی سلامتی کےمشیرلیفٹیننٹ جنرل ریٹائرڈ ناصر جنجوعہ نے افغان صدر اشرف غنی اور چیف ایگزیکٹو عبداللہ عبداللہ سے ملاقات میں طالبان پر زور دیا ہے کہ کابل حکومت کی مذاکرات کی نئی پیش کش قبول کرلیں۔

بین الاقوامی خبر رساں ایجنسی کے مطابق پاکستان کی قومی سلامتی کےمشیرلیفٹیننٹ جنرل ریٹائرڈ ناصر جنجوعہ نے کابل میں افغان چیف ایگزیکٹو عبد اللہ عبداللہ اور افغان صدر اشرف غنی سے علیحدہ علیحدہ ملاقات کی، جس میں دونوں ممالک کے درمیان پاک افغان تعلقات میں بہتری کے لئے اعلیٰ سطح کے مذاکرات کی ضرورت پر زور دیا گیا۔

مشیر قومی سلامتی نے افغان صدر اشرف غنی سے صدارتی آفس میں ہونے والی ملاقات میں ناصر نے افغانستان میں قیام امن کے لیے طالبان سے مذاکرات کے عمل کو سراہا جبکہ چیف ایگزیکٹو عبد اللہ عبداللہ سے ہونے والی ملاقات میں باہمی تعلقات اور دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ ملاقات میں اس امر پر اتفاق کیا گیا کہ طالبان کو افغان حکومت کی امن مذاکرات کی نئی پیش کش سے فائدہ اٹھانا چاہیے اور اس سلسلے کو خطے کے لیے امن کا پیش خیمہ بنانا چاہیے۔

افغانستان کے چیف ایگزیکٹو کی جانب سے جاری کردہ ٹوئٹ کے مطابق ناصر جنجوعہ اور عبد اللہ عبداللہ نے دونوں ممالک کے باہمی تعلقات کو بہتر بنانے کے لیے حکومتی سطح پر مذاکرات کی ضرورت پر زور دیا۔ مشیر قومی سلامتی ناصر جنجوعہ نے افغان امن عمل کی حمایت کی اور طالبان پر زور دیا کہ کابل حکومت کی بروقت نئی مذاکرات کی پیش کش کو قبول کرلیں۔

  پاکستان کی قومی سلامتی کے مشیر ناصر جنجوعہ نے اپنے دورے کے دوران افغان وزیر دفاع، اپنے ہم منصب اور افغان سیکیورٹی ایجنسی کے سربراہ  سے بھی ملاقات کی۔

Mar ۱۹, ۲۰۱۸ ۰۸:۴۲ Asia/Tehran
کمنٹس