Jun ۰۴, ۲۰۲۰ ۲۲:۴۷ Asia/Tehran
  • امریکا، نسل پرستی کے خلاف مظاہرے جاری، 10 ہزار گرفتار

امریکا میں پولیس کے ہاتھوں تشدد کا شکار سیاہ فام نوجوان کے بہیمانہ قتل کے خلاف مظاہروں کا سلسلہ بدستور جاری ہے اور پولیس اب تک 10 ہزار سے زائد مظاہرین کو گرفتار کر چکی ہے۔ 

ہمارے نمائند کی رپورٹ کے مطابق امریکا میں نسل پرستی اور نسلی امتیاز کے خلاف ہونے والے مظاہرے مختلف ریاستوں اور شہروں تک پھیل گئے ہیں اور امریکا کے مختلف شہروں من جملہ لاس اینجلس اور نیویارک سے ہزاوں کی تعداد میں مظاہرین کو گرفتار کیا گیا ہے۔ 
قابل ذکر ہے کہ 25 مئی کو منی سوٹا میں 46 سالہ سیاہ فام شہری جارج فلائیڈ کے پولیس کے ہاتھوں قتل کے خلاف نسل پرستی اور نسلی امتیاز کے خلاف احتجاجی مظاہروں کا سلسلہ شروع ہوا تھا جو اب تک جاری ہے۔ 
امریکا میں نسلی امتیاز کے خلاف ہونے والے مظاہرے سرحدوں کو عبور کرتے ہوئے یورپ کے مختلف شہروں میں ہونے لگے ہیں۔ 

ٹیگس

کمنٹس