• فرانس میں ہنگامہ آرائی، 89 ہزار سیکورٹی اہل کار تعینات

حکومت فرانس کی پسپائی کے باوجود اس ملک میں پرتشدد احتجاج کا سلسلہ بدستور جاری ہے۔

فرانس کے وزیراعظم ایڈورڈ فلپ نے کہا ہے کہ ہفتے کو متوقع مظاہروں کے پیش نظر ملک بھر میں 89 ہزار سیکورٹی اہل کار تعینات کیے جائیں گے جبکہ دارالحکومت پیرس میں ہی آٹھ ہزار اہل کاروں کو تعینات کیا جائے گا۔ اہلکاروں کے ہمراہ بکتر بند گاڑیاں بھی موجود ہوں گی۔

ایک انٹرویو میں فرانسیسی وزیراعظم ایڈورڈ فلپ نے کہا کہ یہ غیر معمولی سیکورٹی انتظامات اس لیے کئے جا رہے ہیں کیونکہ بعض افراد احتجاج کے لیے نہیں بلکہ توڑ پھوڑ اور ہنگامہ آرائی کے لیے آرہے ہیں۔

انہوں نے کہاکہ دس بکتر بند گاڑیاں بھی استعمال کی جائیں گی ۔ 2005 کو ہونے والے مظاہروں کے بعد پیرس میں ہنگامہ آرائی روکنے کے لیے پہلی بار بکتر بند گاڑیاں استعمال کی جا رہی ہیں۔

واضح رہے کہ یلو ویسٹ موومنٹ کے تحت مظاہرین نے سوشل میڈیا پر مسلسل چوتھے ہفتے بھی احتجاج کی کال دی ہے ۔ حکومت مظاہرین کے مطالبے پر پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ واپس لے چکی ہے لیکن اس کے باوجود احتجاج کی کال دی گئی ہے ۔ اب تک ہونے والے پر تشدد مظاہروں میں 600 سے زائد افراد ہلاک، زخمی اور گرفتار ہوئے ہیں۔

ٹیگس

Dec ۰۷, ۲۰۱۸ ۰۸:۰۹ Asia/Tehran
کمنٹس