Feb ۱۸, ۲۰۲۰ ۱۵:۰۵ Asia/Tehran
  • عین الاسد چھاؤنی پر ایران کا حملہ ، امریکا کی طاقت کا توازن درہم برہم

سپاہ پاسداران انقلاب اسلامی کے کمانڈر نے کہا ہے کہ عراق میں عین الاسد امریکی فوجی اڈے پر ایران کے میزائلی حملے نے دنیا میں واشنگٹن کے اندازوں اور طاقت کے توازن کو دربرہم کردیا ہے۔

سپاہ پاسداران انقلاب اسلامی کے سربراہ کمانڈر جنرل حسین سلامی نے المیادین ٹی وی کو ایک انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ عراق میں امریکہ کی عین الاسد فوجی چھاؤنی پر ایران کی میزائلی کارروائی مکمل اور بھرپور اسٹریٹیجک کارروائی نہیں تھی بلکہ امریکی جرائم کے جواب کا آغاز ہے۔

جنرل حسین سلامی نے کہا کہ امریکیوں کو عادت پڑ چکی ہے کہ جس ملک پر بھی چاہیں حملہ کریں اور انھیں کوئی جواب نہ دیا جائے لیکن ایران کا جواب اس بات کا باعث بنا ہے کہ واشنگٹن اپنے اندازوں اور تخمینوں پر نظرثانی کرنے پر مجبور ہو ۔

جنرل حسین سلامی نے عین الاسد امریکی چھاؤنی پر ایران کے حملے کے عالمی اثرات کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران نے ایک معینہ جغرافیائی نقطے پر جوابی کارروائی کی لیکن اس کا اثر عالمی سطح پر مرتب ہوا-

سپاہ پاسداران انقلاب اسلامی کے سربراہ نے کہا  کہ ایران کا اسٹریٹیجک جواب اس وقت مکمل ہوگا جب آخری امریکی فوجی مغربی ایشیا کے علاقے سے باہر نکل جائے۔

جنرل حسین سلامی نے صیہونی حکومت کوخبردار کرتے ہوئے  کہا کہ اسرائیلیوں کے زیرقبضہ تمام علاقے ایران کے نشانے پر ہیں اور صیہونی حکومت اسلامی جمہوریہ کی مسلح افواج کے مقابلے میں امریکہ سے بھی زیادہ حقیر اور کمزور ہے۔

ٹیگس

کمنٹس